پاکستان ایف اے ٹی کی گرے لسٹ سے نکل گیا؛ بے شمار معاشی فوائد کا امکان

فناننشل ایکشن ٹاسک فورس کی گرے لسٹ سے نکلنے کے بعد پاکستان کو بے شمار معاشی فوائد کا امکان ہے۔

ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ سے نام نکلنے سے جہاں پاکستان ممکنہ معاشی پابندیوں کے خطرات سے بچ گیا ہے وہیں بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی ساکھ بھی بہتر ہوگی۔

گرے لسٹ سے نکلنے سے براہ راست بیرونی سرمایہ کاری میں اضافے سمیت ملکی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے اور بین الاقوامی تجارت میں آسانی ہوگی۔

ایف ای ٹی ایف کی گرے لسٹ سے نکلنے کے بعد اب پاکستان کے لئے درآمدات و برآمدات کی نئی راہیں کھلنے کے ساتھ ترسیلات زر میں اضافہ متوقع ہے۔ پاکستان عالمی مارکیٹ میں آسانی سے بانڈ جاری کرنے کے ساتھ ساتھ مختلف ممالک اور عالمی مالیاتی اداروں سے بلا رکاوٹ قرض حاصل کر سکے گا۔

پاکستان نے منی لانڈرنگ اور ٹیررفنانسنگ کے خطرات پر موئثر طریقے سے قابو پا کر عالمی مالیاتی فنڈ کے قرض پروگرام کی اہم شرط بھی پوری کر دی ہے.

گرے لسٹ سے نکلنے کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ پاکستان ایف اے ٹی ایف اور دیگر عالمی ریگولیٹر کی سخت نگرانی سے نکل گیا ہے، پاکستان عالمی مالیاتی اداروں سے مالی روابط بلا خوف جاری رکھے گا۔ تمام بین الاقوامی بینک اور مالی ادارے پاکستان میں اپنا کام جاری رکھیں گے۔

اس کے علاوہ بین الاقوامی سرمایہ کاروں اور بینکوں کو پاکستان میں سرمایہ کاری یا بزنس کے حوالے سے خدشات یا خطرات کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا، پاکستان کو بین الاقوامی فنانشل سسٹم تک رسائی میں کسی رکاوٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں