. مسلم لیگ (ن)کاپارلیمنٹ میں متحدہ اپوزیشن کا مشاورتی اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ - Today Pakistan
Home / اہم خبریں / مسلم لیگ (ن)کاپارلیمنٹ میں متحدہ اپوزیشن کا مشاورتی اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ

مسلم لیگ (ن)کاپارلیمنٹ میں متحدہ اپوزیشن کا مشاورتی اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ

عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں اپوزیشن آپ کی آمرانہ اور فاشست سوچ کو مسترد کرتی ہے ،،اپوزیشن ڈکٹیشن نہیں لے گی ،اپوزیشن حکومتی دھونس اور دھمکیوں سے ڈرنے والی نہیں
اسلام آباد (ٹوڈے پاکستان نیوز)پاکستان مسلم لیگ (ن)نے پارلیمنٹ میں متحدہ اپوزیشن کا مشاورتی اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس میں حکومتی طرز عمل کا جائزہ لیا جائیگا جبکہ مسلم لیگ (ن)کی ترجمان مریم اور نگزیب نے کہا ہے کہ عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں اپوزیشن آپ کی آمرانہ اور فاشست سوچ کو مسترد کرتی ہے ،،اپوزیشن ڈکٹیشن نہیں لے گی ،اپوزیشن حکومتی دھونس اور دھمکیوں سے ڈرنے والی نہیں،عمران صاحب آپ سے گیس اور بجلی کے بلوں میں ظالمانہ اضافہ کا سوال ہوتا رہے گا ،عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں علیمہ باجی کی رسیدیں دینی پڑھیں گی ،عمران صاحب پہلے کنٹینر پر چڑھ کے پارلیمان پہ حملہ کر رہے تھے ، اب پارلیمان کے اندر سے پارلیمان پہ حملہ کر رہے ہیں ،مدر آف آل این آر اوز ڈیل عمران صاحب علیمہ باجی کو دے دی گئی ہے، اب عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے ڈرامہ کیا جارہا ہے،نیب عمران صاحب کو گرفتار کرے ۔ ہفتہ کو وزیراعظم عمران خان کی تقریر پر مریم اورنگزیب ترجمان مسلم لیگ ن نے ردِعمل کا ا ظہار کرتے ہوئے کہاکہ پارلیمنٹ میں متحدہ اپوزیشن کا مشاورتی اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا ہے ،اجلاس میں حکومتی طرزِ عمل کا جائزہ لیا جائےگا-مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں اپوزیشن آپ کی آمرانہ اور فاشست سوچ کو مسترد کرتی ہے – مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران صاحب کان کھول کر س±ن لیں ،اپوزیشن ڈکٹیشن نہیں لے گی ۔ انہوںنے کہاکہ عمران کان کھول کر س±ن لیں اپوزیشن حکومتی دھونس اور دھمکیوں سے ڈرنے والی نہیں ۔انہوںن کہاکہ عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں کہ اپوزیشن آپ کو آپ کی کارکردگی اور عوام کے ساتھ دشمنی پہ کوئی ڈیل اور ڈھیل نہیں دے گی ۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں آپ سے سوال ہوتا رہے گا کہ چھ مہینے میں ملکی قرضے 100ارب کیسے ہو گئے ؟انہوںنے کہاکہ عمران صاحب آپ سے سوال ہوتا رہے گا کہ مہنگائی کی شرح دو گنی کیسے ہو گئی ۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب آپ سے گیس اور بجلی کے بلوں میں ظالمانہ اضافہ کا سوال ہوتا رہے گا ۔ مریم اور نگزیب نے کہاکہ عمران صاحب آپ سے ایک کڑوڑ نوکری اور پچاس گھروں کا سوال ہوتا رہے گا ۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب کان کھول کے س±ن لیں علیمہ باجی کی رسیدیں دینی پڑھیں گی ۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب آپ سے ساہیوال کے معصوم لوگوں کے قتل کا سوال ہوتا رہے گا۔ مریم اور نگزیب نے کہاکہ عمران صاحب سلیکٹڈ وزیراعظم کے پاس نہ کوئی اختیار ہوتا ہے اور نہ کوئی عزت ۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان کی 22 کڑوڑ عوام آپ کو سلیکٹیڈ کہتی ہے کس کس سے بھاگے گیں ؟انہوںنے کہاکہ عمران صاحب پہلے کنٹینر پر چڑھ کے پارلیمان پہ حملہ کر رہے تھے اور اب پارلیمان کے اندر سے پارلیمان پہ حملہ کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم ان کی حکومت اور ٹیم مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے اس لیے کرپشن اور این آر او اور ڈیل کے نعرے لگائے جا رہے ہیں -مریم اورنگزیب نے کہاکہ مدر آف آل این آر اوز ڈیل عمران صاحب علیمہ باجی کو دے دی گئی ہے، اب عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے ڈرامہ کیا جارہا ہے ۔انہوںنے کہاکہ پبلک اکاو¿نٹس کمیٹی کے چیئرمین کے خلاف واویلا سوچی سمجھی سازش کے تحت کیا جارہا ہے۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب استعفیٰ دیں آپ نیب کے ملزم ہیں -مریم اورنگزیب نے کہا کہ نیب عمران صاحب کو گرفتار کرے ۔انہوںنے کہاکہ پارلیمنٹ عمران خان کی مرضی اور منشاءکی غلام نہیں، نہ ہی ان کی دھونس سے چل سکتی ہے۔ انہوںنے کہاکہ عمران خان پارلیمنٹ کو جوابدہ ہیں، پارلیمان عمران خان کو جوابدہ نہیں۔ عمران خان نے کہاکہ عمران خان کی اس آمرانہ اور فسطائی سوچ کو ہم پاش پاش کر دیں گے ۔ انہوںنے کہاکہ سلیکٹڈ وزیراعظم حکومت بری طرح ناکام ہو چکی ہے،عوام دشمن حکومت نا لائق، ناتجربہ کار اور جھوٹی ہے۔انہوںنے کہاکہ چور چور اور کرپشن کا نعرہ لگا کر یہ اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے اور عوام کی دھیان کسی اور طرف لگانے کی کوشش کررہے ہیںانہوکںنے کہاکہ چور چور اور ڈاکو ڈاکو کی بات کی تو یہ بات بہت دور تک جائے گی اور کسی کے ہاتھ کچھ نہیں آئے گا۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب کی منشاءپر پارلیمنٹ نہیں چل سکتی۔ انہوںنے کہاکہ عمران خان کو پارلیمنٹ کو جوابدہ ہونا پڑے گا ۔انہوںنے کہا کہ عمران خان خود کو بادشاہ سلامت سمجھ بیٹھے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ بادشاہ سلامت کوپارلیمان میں شہباز شریف کا سانحہ ساہیوال پر سوال کرنا گراں گزرا ۔ انہو ں نے کہاکہ عمران اگر آپ سمجھتے ہیں کہ اپوزیشن آپ کی دھمکیوں کی وجہ سے آپ کی شرمناک نالائقی اور ناکامی پہ خاموش ہو جائے گی تو آپ کی بھول ہے ۔ انہوںنے کہاکہ ان سے سوالات کیا پوچھ لئیے ہیں کہ بادشاہ سلامت کی طبیعت پر بہت گراں گزرا ہے،ان کو پسند نہیں کہ ان سے کوئی سوال کرے۔ انہوںنے کہاکہ عمران صاحب نے تو اعلان کیا تھا کہ ہر روز ایک گھنٹا پارلیمان میں سوالوں کے جواب دیں گے ایک ہی سوال پہ ڈر کے بھاگ گئے ۔ انہوںنے کہاکہ عمران خان اپوزیشن لیڈر اور چیئرمن پبلک اکاو¿نٹس کمیٹی شہباز شریف سے ڈرتے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ انہیں خوف ہے کہ ان کی حکومت کی چوریاں پکڑی جائیں گی۔مریم اور نگزیب نے کہاکہ عمران خان این آر او کی باتیں اس لئے کرتے ہیں کیونکہ وہ اس وقت مشرف کی گود میں بیٹھے تھے اور منتخب حکومت کے خلاف سازش کر رہے تھے ۔ انہوںنے کہاکہ عمران خان نے کہا تھا کہ پارلیمنٹ میں ایک گھنٹہ سوالات کا خود جواب دیا کروں گا۔انہوںنے کہاکہ شہبازشریف نے ابھی دو سوال پوچھے ہیں تو عمران صاحب پارلیمنٹ سے ڈر کے بھاگ گئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے