. نواز شریف کی طبی بنیادوں پر سزا معطلی کی درخواست پر محکمہ داخلہ پنجاب کو نوٹس - Today Pakistan
Home / اہم خبریں / نواز شریف کی طبی بنیادوں پر سزا معطلی کی درخواست پر محکمہ داخلہ پنجاب کو نوٹس

نواز شریف کی طبی بنیادوں پر سزا معطلی کی درخواست پر محکمہ داخلہ پنجاب کو نوٹس

نوازشریف کی میڈیکل رپورٹس عدالت میں جمع ،عدالت نے آئندہ سماعت پر میڈیکل بورڈ کے ڈاکٹرز کو عدالت میں حاضر ہونے کاحکم

اسلام آباد(ٹوڈے پاکستان نیوز)اسلام آباد ہائیکورٹ نے العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کے سلسلے میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی طبی بنیادوں پر سزا معطلی کی درخواست پر محکمہ داخلہ پنجاب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا ہے جبکہ سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف کی میڈیکل رپورٹس عدالت میں جمع کرادی گئیں عدالت نے آئندہ سماعت پر میڈیکل بورڈ کے ڈاکٹرز کو طلب کرلیا ۔ بدھ کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل ڈویژن بینچ درخواست پر سماعت کی۔ اس موقع پر پنجاب حکومت کے اسپیشل میڈیکل بورڈ نے رپورٹ جمع کرائی جس میں کہا گیا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کو ایسے اسپتال میں رکھا جائے جہاں 24 گھنٹے اچھی طبی سہولیات میسر ہوں، نوازشریف کو دل کی شریانوں کا مرض لاحق ہے۔اسپیشل میڈیکل بورڈ نے رپورٹ میں تجویز کیا کہ نوازشریف کے دل کے مرض کی وجہ سے ان کے پرانے معالج سے بھی مشورہ کیاجائے جبکہ بلڈ شوگر اور بلڈ چارٹ کو مینٹین رکھا جائے، انجکشنز کی تعداد میں 20 سے بڑھا کر 24 کردی گئی ہے۔ میڈیکل بورڈ کی رپورٹ میں مریض کےلئے مستقل آرام تجویز کرتے ہوئے ٹیبلٹ کو بھی تبدیل کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ سماعت کے دور ان نیب حکام نے موقف اختیار کیا کہ صرف بیماری کی وجہ سے سزا یافتہ مجرم کو ضمانت نہیں دی جاسکتی۔نیب حکام نے کہا کہ میڈیکل بورڈ کی سفارش پر مجرم کو بہتر طبی سہولیات دی جاتی ہیں۔سماعت کے دور ان عدالت نے تمام رپورٹس فریقین کودینے کی ہدایت کی ہے ۔ جسٹس عامر فاروق نے خواجہ حارث سے استفسار کیا کہ آپ کی دوسری درخواست پر سماعت کب ہے؟جس پر خواجہ حارث نے جواب دیا کہ 18 فروری کو ہے لیکن ہم اس درخواست کوپریس کریں گے۔ خواجہ حارث نے کہاکہ آپ سماعت (آج)جمعرات یا پیر کو سماعت کےلئے مقرر کرلیں جس پر جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ18فروری کےلئے ہی اس کو بھی فکس کرلیتے ہیں۔عدالت نے آئندہ سماعت پر ہوم ڈیپارٹمنٹ پنجاب کو نوٹس جاری کر دیا۔ سماعت کے دور ان عدالت نے نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ سے متعلق استفسار کیا جس پر خواجہ حارث نے بتایا کہ نواز شریف کی چار میڈیکل رپورٹس جمع کرائی گئی ہیں۔جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ نواز شریف کا علاج کب سے ہو رہا ہے،میڈیکل بورڈ کس کے حکم پر اور کیوں بنایا گیا؟۔دلائل سننے کے بعد عدالت نے نواز شریف کے علاج سے متعلق تمام تفصیلات طلب کرلیں۔ سماعت کے دور ان عدالت نے کہا کہ ہم نے جیل سپرنٹنڈنٹ کو بھی میڈیکل رپورٹس جمع کرانے کی ہدایت کی تھی۔ جیل حکام نے بتای کہ میڈیکل رپورٹس رات کو ہی ملی ہیں، ابھی عدالت میں لے کر آئے ہیں۔عدالت نے میڈیکل رپورٹس کی نقول نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث اور نیب پراسیکیوٹر کو بھی فراہم کرنے کی ہدایت کی ۔بعد ازاں عدالت عالیہ نے تمام رپورٹس فریقین کو دینے کی ہدایت کرتے ہوئے میڈیکل بورڈ کے ڈاکٹرز کو آئندہ سماعت پر عدالت میں حاضر ہونے کا حکم اور آئندہ سماعت کےلئے حکومت پنجاب کو بھی نوٹس جاری کردیا۔ مزید سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کردی گئی ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے