. حکومت بےروزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کیلئے اقدامات کرے - Today Pakistan
Home / اداریہ / حکومت بےروزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کیلئے اقدامات کرے

حکومت بےروزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کیلئے اقدامات کرے

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ ترقی یافتہ، خوشحال اور تعلیم یافتہ بلوچستان کے اہداف کو حاصل کرنے کے لئے حکومت صوبہ بھر میں یکساں ترقیاتی عمل کومربوط طریقے سے آگے بڑھانے کے لئے کوشاں ہے اور ا اس سلسلے میں کسی علاقے کو نظرانداز نہیں کیا جائے گا، بلوچستان ہم سب کا ہے اور یہ ہماری آئینی ذمہ داری ہے کہ صوبے سے غربت، پسماندگی اور ناخواندگی کا خاتمہ کرکے بلوچستان کو دیگر صوبوں کے برابر لائیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپوزیشن اراکین اسمبلی کے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا وزیراعلیٰ کا کہناتھا کہ ترقی یافتہ اور خوشحال بلوچستان کا قیام موجودہ حکومت کا وژن ہے جس کی تکمیل کے لئے ہم سب کو اپنا آئینی کردار ادا کرنا ہوگا۔ صوبے کے کسی علاقے کو وسائل کی تقسیم میں نظرانداز نہیں کیا جائے گا، صوبے کے بہتر مفاد میں اپوزیشن سے ہر اہم امور پرباہمی مشاورت کی جائے گی،حکومت وسائل کی منصفانہ تقسیم پر یقین رکھتی ہے اور کسی کے ساتھ نا انصافی نہیں ہونے دے گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی خواہش ہے کہ جلد سے جلد اسمبلی میں کمیٹیوں کی تشکیل کو یقینی بنایا جاسکے جن کی بروقت تشکیل انتہائی اہمیت کی حامل ہے، وزیراعلیٰ نے اپوزیشن اراکین کو یقین دلایا کہ حکومت کمیٹیوں کے جلد از جلد قیام اور پبلک اکا¶نٹس کمیٹی کے چیئرمین کی نامزدگی میں اپنے مقصد اور ذمہ داری کو احسن طریقے سے ادا کرے گی۔ پی ایس ڈی پی میں کسی کے ساتھ ناانصافی نہیں ہوگی، تمام علاقوں کو یکساں ترقی کے سفر میں شامل کیا جائے گا، پی ای ڈی پی میں اپوزیشن اراکین کے اضلاع کو خصوصی اہمیت دی جائے گی اپوزیشن حکومت کا حصہ ہے اس کے بغیر ترقی کے اہداف حاصل نہیں کئے جاسکتے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ تمام اراکین اسمبلی اپنے حلقوں سے ووٹ لے کر منتخب ہوئے ہیں ان کے متعلقہ علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں سمیت مختلف امور پر باہمی مشاورت کے بعد ہی کوئی اقدامات اور فیصلے کئے جائیں گے۔
بلوچستان میں بےروزگاری اور ناخواندگی اہم ترین مسئلہ ہے اگر ماضی میں اس اہم مسائل کی طرف توجہ دی جاتی تو آج بلوچستان کا منظر نامہ یکسر مختلف ہوتا لیکن ہمیشہ صوبے کو نظر انداز کرنے کے ساتھ ساتھ اقدامات کوبیانات تک محدود رکھا گیا آج بھی صوبے کے ہزاروں نوجوان بےروزگاری کے ہاتھوں تنگ آکر ڈگریاں جلا رہے ہیں کیونکہ وہ ان کے کسی کام نہےں آرہیں ۔ سابقہ حکومت کے دور میں صوبے کی 27 ہزار پوسٹیں خالی ہونے کا انکشاف ہوا ان پر بھرتیوں کے احکامات بھی جاری ہوئے لےکن عملی قدم نہےں اٹھایا جاسکا ۔ یہی حال ترقیاتی سکےمات کا بھی رہا ہے من پسند علاقوں کو پی ایس ڈی پیز تقسےم کرنے سے ایک طرف پسماندہ صوبے کے فنڈز کے غلط استعمال ہوا تو دوسری جانب اس کے ثمرات عوام تک بھی نہ پہنچ سکے ۔ وزیراعلیٰ بلوچستان کو چاہئے کہ بےروزگاری اور ناخواندگی کے اہم مسئلہ پر قابو پانے کےلئے جلد از جلد اقدامات کرنے کے احکامات جاری کریں اور مےرٹ پر بھرتیاں کی جائیں یہی صوبے اور یہاں کی عوام کے مفاد میں بہتر ہوگا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے