آرمی چیف کا دورہ، چین کا ہنگامی طور پر پاکستان کیلیے 100 ملین یوآن امداد کا اعلان

چین کے وزیر دفاع وی فینگھے نے بیجنگ میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے سے ملاقات کے بعد کہا ہے کہ پاکستان اور چین کے درمیان باہمی تعلقات کے لیے فوجی تعاون ’اہم ستون‘ ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) سے جاری بیان کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ دو روزہ سرکاری دورے پر آج چین پہنچے جہاں چینی وزیر دفاع وی فینگھے کے ساتھ ان کی ملاقات ہوئی۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ ملاقات کے دوران چینی وزیر دفاع نے کہا کہ پاکستان اور اس کی افواج کے ساتھ آزمودہ تعلقات کی قدر کرتے ہیں۔

چینی وزیر دفاع نے پاک-چین اقتصادی راہداری (سی پیک) پر بات کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک کی ترقی کا مقصد دونوں ممالک کے لیے فوائد اور خوش حالی لانا ہے اور پاک-چین فوجی تعاون کو باہمی تعلقات کے لیے ’اہم ستون‘ قرار دیا۔

آئی ایس پی آر کے بیان میں مزید کہا گیا کہ چینی وزیر دفاع نے پاکستان میں سی پیک کے منصوبوں کے لیے محفوظ ماحول فراہم کرنے کے لیے کیے گئے اقدامات اور خطے کے استحکام کے لیے کوششوں پر آرمی چیف کا شکریہ ادا کیا۔

بیان میں کہا گیا کہ چینی وزیر دفاع نے سی پیک منصوبے کی ترقی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے منصوبوں کی جلد تکمیل کے لیے توقع ظاہر کی۔

چینی وزیر دفاع نے پاکستان میں سیلاب کی تباہ کاریوں پر اظہار افسوس کرتے ہوئے جاں بحق ہونے والوں کے اہل خانہ کے ساتھ اظہار تعزیت کی۔

آئی ایس پی آر کے بیان کے مطابق وی فینگھے نے کہا کہ ان کی حکومت پاکستان کو سیلاب متاثرین کے لیے امدادی سرگرمیوں میں تکنیکی مدد فراہم کرنے کے خواہش مند ہے اور ساتھ سیلاب زدہ علاقوں میں متاثرین کی امداد کے لیے افواج پاکستان کی کاوشوں کو سراہا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ اس دوران آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے چینی وزیر دفاع کے مؤقف اور پاکستان کے لیے چین کی مسلسل مدد پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں