سیلاب کے نقصانات سے بچنے کے لیے نئے ڈیمز بنانا ہوں گے، آرمی چیف

چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ مستقبل میں نقصانات سے بچنے کے لیے ڈیمز بنانا ہوں گے، جس پر کام شروع کردیا گیا ہے اور آئندہ ہفتے وزیراعظم سمیت تمام وزرائے اعلیٰ کو اس پر تفصیلی بریفنگ بھی دی جائے گی۔

پاک فوج کے شعبۂ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سندھ کے ضلع دادو میں سیلاب متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور متاثرین سے ملاقات کی۔ بعد ازاں سپہ سالار نے ریسکیو اور ریلیف کے کام میں حصہ لینے والے جوانوں سے ملاقات کی۔ سپہ سالار نے متاثرین کے لیے فوری طور پر پانچ ہزار خیمے بھی فراہم کرنے کی ہدایت کی۔

’دادو سیلاب سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے‘

دورے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آرمی چیف نے کہا کہ ’میں نے پاکستان کے تمام سیلاب زدہ علاقوں اوتھل، نصیر آباد، راجن پور، سوات، لاڑکانہ، شہداد کوٹ، خیر پور سمیت دیگر کا دورہ کیا۔ ملک میں سب سے زیادہ تباہی دادو میں ہوئی، جہاں منچھر جھیل اور حمل جھیل کے درمیان 100 کلو میٹر کا فاصلہ ہے تاہم قدرتی آفت کے باعث دونوں جھیلوں کا پانی آپس میں مل چکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں