مذہبی منافرت اور شدت پسندی پھیلانے والے عناصر پر کڑی نظر رکھی جائے : میر ضیاء اللہ

صوبائی مشیرداخلہ میر ضیاء اللہ لانگو کی زیر صدارت 12 ربیع الاول کے حوالے سے اعلیٰ سطح اجلاس منعقدہ ہوا ۔اجلاس میں عید میلاد النبی ﷺ کے حوالے سے تقریبات کے انتظامات کاجائزہ اور صوبے میں امن وامان کی صورتحال پر بھی تفصیلی غور و غوض کیا گیا اجلاس میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ زاہد سلیم ، ڈی آئی جی کوئٹہ اظفرمہیسر، ڈی جی لیویز قادربخش پرکانی، شہاب عظیم و دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی اس موقع پر شرکاء کو ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ اور اور ڈی آئی جی کوئٹہ نے تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ 12 ربیع الاول کے جلوسوں کیلئے کوٹئہ میں 2000 ہزار اہلکارتعینات کیے گے ہیں جبکہ19اضلاع میں کل 13 جلوس نکالے جائیں گے اجلاس کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مشیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا کہ12 ربیع الاول کے دوران محافل ، اور جلوسوں کی سیکورٹی کو یقینی بنایا جائے گا اور اس سلسے میں صبح 8 بجے سے رات 8 بجے تک موبائل سگنلز بند کیے جائیں گے جبکہ 12 ربیع الاول کےجلوسوں کے شرکا کو بہترین سہولتیں ماضی کی طرح فراہم کی جائیں مشیرداخلہ کا کہنا تھا کہ ادارے امن و امان کی صورتحال کی بہتری اور عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے جانفشانی سے فرائض سرانجام دے رہےہیں اورشرپسند عناصر کے مذموم عزائم ناکام بنانے کیلئے مربوط انٹیلی جنس سے موثر انداز سے استفادہ کیا جائے گا میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا کہ مذہبی منافرت اور شدت پسندی پھیلانے والے عناصر پر کڑی نظر رکھی جائے اور مذہبی ہم آہنگی بھائی چارے اور قانون کی بالا دستی کو ہر صورت قائم رکھا جائے میر ضیا نے اجلاس کے شرکاء کو ہدایات دیں کہ بارہ ربیع الاول کے جلوسوں کے راستوں پر عام ٹریفک کو متبادل راستے فراہم کئے جائیں اور ٹریفک کی روانی کو ہر صورت بحال رکھا جائے انہوں نے کہا کہ کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں پاک فوج کو اسٹینڈبائی رکھا گیا ہے۔ جبکہ
جلوس کی فضائی نگرانی بھی کی جائے گی اور صوبے بھر میں اسلحہ کی نمائش پر مکمل پابندی ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں